Akhtar Shirani

    285 Views
    ِAkhtar Shiraniاختر شیرانی (1948-1905)
    کُل تعداد : 21
    1. آؤ بے پردہ تمہیں جلوۂ پنہاں کی قسم
    2. آرزو وصل کی رکھتی ہے پریشاں کیا کیا
    3. آشنا ہو کر تغافل آشنا کیوں ہو گئ
    4. اس مہ جبیں سے آج ملاقات ہو گئی
    5. اشک باری نہ مٹی سینہ فگاری نہ گئی
    6. اگر وہ اپنے حسین چہرے کو بھول کر بے نقاب کر دے
    7. ان کو بلائیں اور وہ نہ آئیں تو کیا کریں
    8. اے دل وہ عاشقی کے فسانے کدھر گئے
    9. تمناؤں کو زندہ آرزوؤں کو جواں کر لوں
    10. کام آ سکیں نہ اپنی وفائیں تو کیا کریں
    11. کچھ تو تنہائی کی راتوں میں سہارا ہوتا
    12. کس کو دیکھا ہے یہ ہوا کیا ہے
    13. کیا کہہ گئی کسی کی نظر کچھ نہ پوچھئے
    14. محبت کی دنیا میں مشہور کر دوں
    15. میں آرزوئے جاں لکھوں یا جان آرزو!
    16. نہ بھول کر بھی تمنائے رنگ و بو کرتے
    17. وعدہ اس ماہرو کے آنے کا
    18. وہ کبھی مل جائیں تو کیا کیجئے
    19. وہ کہتے ہیں رنجش کی باتیں بھلا دیں
    20. یارو کوئے یار کی باتیں کریں
    21. یوں تو کس پھول سے رنگت نہ گئی بو نہ گئی




    Rate this post? اس نگارش کی درجہ بندی کریں

    Click on a star to rate it! درجہ بندی کے لئے موزوں ستارے پر کلک کریں

    Average rating اوسط درجہ / 5. Vote count: تعداد رائے

    No votes so far! Be the first to rate this post. اس نگارش کی درجہ بندی نہیں ہوئی، آپ پہلی درجہ بندی کریں

    We are sorry that this post was not useful for you!

    Let us improve this post!

    Tell us how we can improve this post?